وزیراعظم عمران خان کی اہم امریکہ یاترا!!!!!!!

وزیراعظم عمران خان کی اہم امریکہ یاترا!!!!!!!

وزیراعظم عمران خان کی اہم امریکہ یاترا!!!!!!!

کالم نگار:حمزہ میر!!!!!!!!

22 جولائی 2018 وہ تاریخ ساز دن تھا جب پاکستانی وزیراعظم عمران احمد خان دنیا کے سب سے طاقتور سربراہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملے اور ملاقات انتہائی سمجھی جا رہی تھی اور حقیقت میں ملاقات خوشگوار موڈ میں ہوئی عمران خان جب وائٹ ہاوس پہنچھے تو امریکی صدر ٹرمپ نے ان کو خود استقبال کیا اور پورے وائٹ ہاوس کا دورہ کروایا صحافیوں کے سوالات کا جواب بھی دیا اور الگ میں ملاقات بھی کی اندورن خانہ امریکی صدر نے آرمی چیف جنرل قمر باجوہ سے بھی ملاقات کی اور افغانستان سے فوجی انخلا کے متعلق بات کی اور دیگر امور بھی زیر غور آئے جن میں افغان طالبان سے مذاکرات سمیت اسلحہ ڈیل اور مالی امداد شامل تھیں یہ ملاقات اندرون خانہ ہوئی تھی- ٹرمپ سے ملاقات کے دوران عمران خان نے افغانستان کے حوالے سے پاکستان کا دوتوک موقف سامنے رکھا اور بتایا کہ جنگ تمام چیزوں کا حل نہیں اسی جنگ میں پاکستان کے تقریبا 70،000 لوگ ہلاک ہوئے ہین اب اس کو بند ہونا چاہیے ملاقات کے دوران کشمیر کا ایشو بھی اٹھایا اور ٹرمپ نے ثالثی کا کردار ادا کرنے کا ارادہ ظاہر کیا اور کہا ان کو ایسا کردار ادا کر کے کوشی ہو گی لیکن ان گورے حکمرانوں کا کوئی دین ایمان نہیں ہوتا منہ پر آپ کے کسی اور کے ساتھ اس کے ہو جاتے ہیں اس کا یقین نہیں ہوتا یہی ٹرمپ تھے جو مودی کے ساتھ ملاقات میں کچھ اور ہی کہتے پائے گئے تھے اور اب کوئی اور رام کہانی سنا رہے ہیں- ٹرمپ کا اتنا پروٹوکول دینا بنتا تھا ان کی تمام شرائط پہلے ہی مان لی گئیں تھیں حافظ سعید کو جیل میں ڈال دیا گیا ٹرمپ نے بیان میں واضح طور پر کہا ہے کہ پہلے پاکستان ہمارا ساتھ نہین دے رہا تھا کیونکہ خاوجہ آصف نے بیان داغہ تھا جب وہ وزیر خارجہ تھے امریکہ کو کہ اپنی امداد اپنے پاس رکھو نہیں چاہیے تمھاری امداد یعنی پاکستان امریکی کی باتیں پہلے نہیں مان رہا تھا پاکستان نے امریکیہ کی بات مانی امریکہ کی طرف سے کالعدم قرار دی جانے والی جماعتوں پر پاکستان میں بھی پابندی لگا دی گئی سب کا اپنا دندہ ہے بھائی صاحب، عمران خان نے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی پر بھی بات کی اور ٹرمپ نے ڈاکٹر شکیل آفریدی کی رہائی پر بات کی اور ساتھ ہی کالعدم لوگوں اور جماعتوں پر مزید پابندی لگانے کا مطالبہ کیا عمران خان کی تعریف کی ٹرمپ نے اور ساتھ ہی عمران خان نے مختلف آئی-ٹی کمپنیوں کے مالکان سے مذاکرات کیے اور پاکستان میں ٹیکنالوجی کو مزید بہتر بنانے کا ارداہ کیا گیا مائیکروسافٹ کے وٖفد کی بھی عمران خان سے ملاقات ہوئی اور مائیکروسافٹ پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے پر رضامند ہو گیا لیکن ساتھ ہی بل گیٹ نے سرمایہ کاری سے انکار کر دیا اسی طرح اور بھی بہت سی مشہور کمپنیز نے پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کا یقین دلایا- ٹرمپ نے عمران کان سے چائینہ سے ہونے والے تمام معملات کو سامنے لانے پر زور دیا اور چائینہ سے دور رہنے کا بھی اشارہ دیا ساتھ ہی اسلحہ کی ڈیل بھی فائنل کی گئی پاکستان اگلے 10 سال تک امریکہ سے اسلحہ خریدے گا اور ساتھ ہی ڈالر کو نیچھے لانے کے لیے کچھ امداد بھی دی گئی

 160