نواز لیگ اختلافات اور مشکلات کا شکار!!!!!

Hamza Meer

16 مئی 2019



نواز لیگ اختلافات اور مشکلات کا شکار!!!!!

کالم نگار:حمزہ میر!!!!!

ویسے تو سیاسی جماعتوں کے اندر اختلافات ایک عام بات ہے موجودہ حکومتی جماعت تحریک انصاف بھی اختلاف کا شکار ہے وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین کے درمیان اختلافات سب کے سامنے ہیں لیکن یہ اختلاف ایک حد تک ہیں براہ راست پارٹی لیڈر سے کسی نے اختلاف نہیں کیا لیکن دوسری طرف مسائل کے دلدل میں پھنسی نوازلیگ میں کچھ لوگ اپنی پارٹی قیادت سے اختلاف کر رہے ہیں جس کی ایک واضح مسائل خواجہ سعد رفیق کا موجودہ رویہ ہے، خواجہ سعد اس وقت شہباز شریف Shehbaz Sharif سے سخت ناراض ہیں کیونکہ جب نیب نے خواجہ سعد رفیق کو گرفتار کیا تو خواجہ صاحب سمجھتے تھے شہبازشریف ان کو بھی پبلک اکاوئنٹ کمیٹی کا ممبر بنا دیا جائے گا اس طرح ان کا بھی پروڈیکشن آڈر جاری ہو جائے گا لیکن اچانک شہبازشریف نے ان کا نام لسٹ سے باہر نکال دیا اس سب واقع کے بعد خواجہ سعد رفیق خاموش رہے مگر سینیر لیڈرز خواجہ آصف، شاہد خاقان،احسن اقبال اور رانا تنویر کے ساتھ اپنے شکوک شبہات کا اظہار کیا- لیکن اب اچانک لندن یاترا پر گئے شہبازشریف نے رانا تنویر کو چیرمین پبلک اکاوئنٹ کمیٹی بنا دیا اور خواجہ آصف کو پارلیمانی لیڈر بنا دیا اور خواجہ سعد منہ دیکھتے رہ گئے اور اس بات کا اظہار انہوں نے پارٹی کے اجلاس میں کر دیا کیونکہ خواجہ سعد سمجھتے تھے کہ ان کو چیرمین پبلک اکاوئنٹ بنایا جائے گا تا کہ وہ خود ہی اپنے پروڈیکشن آڈر جاری کر سکیں گے لیکن "دل کے آرمان آنسو میں رہ گئے"- خواجہ سعد اس وقت شدید ناراض ہیں کیونکہ پارٹی میں ان کو کوئی خاص عہدہ بھی نہیں ملا جس سے ہر کوئی حیران ہے کہ ایسا کیوں ہوا؟ آئیں اس کا جواب بھی آپ کو دوں لیگی قیادت نواز اور شہبازشریف سمجھتے ہیں کہ لاہور سے کوئی بندہ آگے نا آئے اسی وجہ سے خواجہ سعد کو کوئی عہدہ نہیں ملا کیونکہ خواجہ سعد رفیق لاہور میں ایک اپنا الگ قد رکھتے ہیں اور ہر حلقے میں ان کا 10 سے 20 ہزار ووٹ موجود ہے اور اسی وجہ سے دونوں شریف برادران سمجھتے ہیں کہیں خواجہ سعد رفیق نئی قیادت بن کر نا سامنے آ جائیں کیونکہ خواجہ سعد کا اتنا قد ہے کہ وہ بن جائیں اور اس سے مریم نواز Maryam Nawaz اور حمزہ شہباز کو خطرہ ہو گا- جاوید لطیف اور رانا تنویر کی لڑائی بھی سب کے سامنے ہیں جب رانا تنویر نے کہا پبلک اکاوئنٹ کمیٹی کی چیرمین کی نشست بہت مشکل ہے مجھے پارٹی نے اہم زمہ داری سونپی ہے جس پر جاوید لطیف نے کہا چھوڑ دیں مت بنیں جس پر خواجہ آصف نے مداخلت کر کے بات ختم کروائی- نوازلیگ میں اختلافات زبان زدے عام ہیں، مریم نواز Maryam Nawaz اور حمزہ شہباز دونوں کی لڑائی کی باتیں بھی زبان زدے عام ہیں-

 50