اپوزیشن کی بےچینی وجہ کیا!!!!!

Such Do Qadam Door

16 اپریل 2019



اپوزیشن کی بےچینی وجہ کیا!!!!!

تحریر حمزہ میر!!!!

دنیا کا کوئی بھی ملک جہاں حکومت عوام کے ووٹوں کی بنیاد پر قائم ہوتی ہے وہاں پر ایک اچھی اور مضبوط اپوزیشن بھی ہوتی ہے جو حکومت کے اقدامات پر نظر رکھے ان کی پالیسیز پر ان کے ساتھ بحث کرے پاکستان ( Pakistan )میں بھی اپوزیشن ہے- اپوزیشن اتحاد میں شامل بڑھی جماعتیں مسلم لیگ نواز،پیپلز پارٹی،متحدہ مجلس عمل، عوامی نیشنل پارٹی متحد ہو کرنوزائیدہ حکومت وقت کے خلاف صف آرا ہو رہی ہیں کیونکہ نیب والی سرکار مکمل طور پر ایکٹیو ہو چکی ہے اپوزیشن میں شامل وہ لوگ جنہوں نے ملکی خزانے کو نقصان پہنچایا ہے ان کوڈر لگنے لگ پڑا ہے کہیں ان کو بھی نیب والے بابو گرفتار نا کر لیں اور حسب سابق مولانہ فضل الرحمان پل کا کردار ادا کر رہے ہیں سابق صدر پاکستان ( Pakistan )آصف علی زرداری کا پیغام سابق وزیراعظم نواز شریف ( Nawaz Sharif )تک پہنچاتے ہیں اور میاں نواز شریف ( Nawaz Sharif )کا پیغام زرداری تک پہنچاتے ہیں اب تو بلاول بھٹو ( Bilawal Bhutto ) ذردارینے بھی جیل میں نوازشریف سے ملاقات کی یعنی جس کو ضیا کی باقیات کہتے تھے اسی سے ملاقات کی پہلےزرداری صاحب تو میاں صاحب کی بات سنتے نہیں تھے لیکن اب چونکہ زرداری صاحب کے گرد گھیرا تنگ ہو رہا ہے اور ان کے قریبی ساتھی انور مجید جیل میں ہیں اور شاید وہ وعدہ معاف گواہ بننے جا رہے ہیں، جعلی بینک اکاونٹ کے کیسز بھی کھل چکے ہیں نیب نے بھی کاروائی کا آغاز کر دیا ہے اور 20 مارچ کو جو پیشی تھی زرداری صاحب کی اس دن نیب نے آصف زرداری کو گرفتار کرنے کا مکمل پلان بنا لیا تھا لیکن حالات کو دیکھتے ہوئے گرفتاری موخر کر دی گئی اب شاید نیب اپنا پلان چیز کرے گا بلاول زرداری کو کراچی بلائے گا اور آصف زرداری کو پنڈی تاکہ گرفتار کیا جا سکے- ان تمام کیسز کے بعد زرداری صاحب کا جیل جانا پکا ہے اور زرداری صاحب پر ڈالر کوئین لیڈی آیان علی سمگلنگ کیس بھی خطرے سے کم نہیں اور زرداری کی بہن ادی فریال بھی جیل جانے والی ہیں انہوں نے دبئ میں اپنے ملازم کے نام پر پراپرٹی خریدی اور آغا سراج سپیکر سندھ اسمبلی بھی گرفت میں آ گئے ہیں ان کے بینک اکاوئنٹ سے 10 کروڑ کی بیرونی کرنسی ملی ہے۔ زرداری گروپ کے لیے اگلے کچھ ہفتے بہت اہم ہیں کیوینکہ زرداری کمیشن مرچینٹ گروپ کے اہم لوگوں کے وارنٹ جاری ہو چکے ہیں اور زرداری صاحب کی گرفتاری بھی ممکن ہے اس لیے پپلزپارٹی کے پیٹ میں درد اٹھ گیا ہے اور نیب درد ٹھیک کر دے گا ان کے پاس دوائ ہے ایسی گولی ہے کہ پیٹ درد فوری ٹھیک ہو جائے گی۔ دوسری طرف نیب کے کیس میں سزایافتہ نوازشریف کی سیاست بھی ماضی کا قصہ بن گئے ہے شہباز شریف ( Shehbaz Sharif )کا آشیانہ کیس بھی آخری مراحل میں ہے- مولانہ پر بھی کیس کھل رہے ہیں اور نواز لیگ کے بہت اہم لوگ نیب کے رڈار پر ہیں اور خواجگان پر کیس چل رہے ہیں اور خواجہ سعد تو جیل میں ہیں۔ حکومت کو گھر بھیجنا اپوزیشن کے لیے مشکل نہیں نمبر گیم بہت آسان ہے، بی-ان-پی مینگل کے پانچ ممبر ہیں انہوں نے عمران خان ( Imran Khan )کو ووٹ دیا لیکن اب وہ اپوزیشن بینچ پر اجلاس میں نظرآتے ہیں اور متحدہ بھی اب خلاف ہیں لہذا حکومت کو اب ہر قدم پھونک کے رکھنا ہو گا اور جو بھی ہو احتساب کے نھرہ کو بلند رکھنا ہو گا اور میرے کپتان گھبرانہ نہیں احتساب کرنا ہے بےشک علیم خان ہو، ترین صاحب ہوں احتساب سب کا۔

 43