وزیراعظم عمران خان Imran Khan نے ایک بار پھر اعلان کیا ہے کہ کرپشن پر کسی کے ساتھ کسی قسم کی مفاہمت نہیں کروں گا۔

15 مارچ 2019

corruption par kisi ke sath kisi qisam ki mafahmat nahi karoon ga : wazeer e azam

وزیراعظم عمران خان Imran Khan نے ایک بار پھر اعلان کیا ہے کہ کرپشن پر کسی کے ساتھ کسی قسم کی مفاہمت نہیں کروں گا۔

باجوڑ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان Imran Khan کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقے کے لوگوں کو جنگ سے بہت نقصان پہنچا لیکن ہر مشکل کے بعد اللہ آسانی پیدا کرتا ہے، انشااللہ قبائلی علاقوں کا آسانی کا وقت شروع ہو گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 26 سال پہلے جب باجوڑ آتا تھا تو سوچتا تھا کہ یہاں کے حالات کیسے بدلیں گے، قبائلی علاقوں کو ماضی میں علاقہ غیر کہا جاتا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقوں میں 75فیصد لوگ غربت کی لکیر سے نیچے تھے، اب ہم قبائلی علاقوں کی مدد کریں گے، این ایف سی ایوارڈ سے ملنے والا 3 فیصد قبائلی علاقوں پر خرچ کریں گے۔

عمران خان Imran Khan نے کہا کہ سب کو خوشخبری سناتا ہوں، تھوڑا سا صبر کریں، ملک کو اپنا گھر سمجھیں، قطر، یو اے ای اور چین China سے سرمایہ کاری کروا رہے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ لوگ پاکستان Pakistan میں سرمایہ کاری کے لیے تیار ہیں، سب سے پہلے لوگوں کی تعلیم، صحت اور اسپتالوں پر پیسہ خرچ کریں گے جب کہ لیویز اور خاصہ دار فورس کو بےروزگار نہیں ہونے دیں گے، پولیس میں ضم کریں گے، نوجوانوں کو سود سے پاک قرضہ دیں گے تاکہ دوکان اور کاروبار کر سکیں۔

عمران خان Imran Khan کا کہنا تھا کہ تھوڑا سا صبر کریں، گرڈ اسٹینشن بن رہا ہے جس سے قبائلی علاقوں کا بجلی کا مسئلہ بھی حل کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ باجوڑ میں 300 مساجد میں سولر سسٹم لگائیں گے اور باجوڑ کے لوگوں کو 8 ہزار نوکریاں دیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسپورٹس کے لیے بھی پیسہ دے دیا ہے، چھوٹی صنعتوں کے لیے انڈسٹریل زون بنائیں گے۔

کشمیریوں کو آزادی کی تحریک چلانے پر سلام پیش کرتا ہوں، وزیراعظم

عمران خان Imran Khan نے کہا کہ بھارت India میں الیکشن ہے اور بھارت India کی ایک جماعت نفرتیں پھیلا کر انتخابات جیتنا چاہتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم امن چاہتی ہے، ہم سارے ہمسایوں کے ساتھ امن چاہتے ہیں، ہم جنگ نہیں چاہتے، غلطی سے بھی کوئی اسے ہماری کمزوری نہ سمجھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم بار بار بھارت India کو کہہ رہے ہیں کہ جنگ کہ بجائے تجارت کریں، نوجوانوں کے لیے روز گار پیدا کرنا چاہتے ہیں، لوگوں کے لیے خوشحالی اور سرمایہ کاری لانا چاہتے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ پوری دنیا دیکھ رہی ہے، کشمیری آزادی کی تحریک چلا رہے ہیں، ان کی دلیری پر انہیں سلام پیش کرتا ہوں، بھارت India کو کہتا ہوں کہ کشمیر کا مسئلہ بات چیت سے حل کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت India میں الیکشن ہو رہے ہیں، اگلے 30 دن ہمیں دھیان سے رہنا ہو گا، قبائلی علاقے کے عوام کو چوکنا رہنا ہے اور اپنی حفاظت کرنی ہے۔

اب کسی سے کوئی این آر او نہیں ہو گا: عمران خان

اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 10 سالہ پارٹنرشپ میثاق جمہوریت نہیں میثاق کرپشن ہے، پارٹنر شپ والے کہتے ہیں جمہوریت خطرے میں ہے، جمہوریت نہیں بڑے بڑے ڈاکو خطرے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کرپشن پر کسی کے ساتھ کسی قسم کی مفاہمت نہیں کروں گا، عوام کا پیسا لوٹنے والوں سے کسی قسم کی مفاہمت، ڈیل اور سمجھوتا نہیں کروں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ دو این آر اوز سے ملک میں بڑی مشکلات پیدا ہوئیں، اب کسی سے کوئی این آر او نہیں ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان Afghanistan میں طالبان سے بات چیت شروع ہو گئی ہے، عنقریب وہاں اچھی حکومت ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان Afghanistan کے لوگ ہمارے بھائی ہیں، ان سے تو ہماری دوستی ہے جب کہ ایران Iran ہمارے ساتھ 1965 میں ساتھ کھڑا تھا جو کوئی نہیں بھول سکتا۔

 62