آسٹریلیا کیخلاف سیریز میں سرفراز سمیت کئی اہم کھلاڑیوں کو آرام دینے کا فیصلہ

25 فروری 2019

Australia kay khilaaf series mein Sarfraz samait kayi ahem khiladion ko aaraam dainay ka faisla

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے مصروف اور نان اسٹاپ سیزن کے بعد پاکستانی ٹیم انتظامیہ آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں کپتان سرفراز احمد سمیت کئی اہم کھلاڑیوں کو آرام دینے کی منصوبہ بندی کررہی ہے تاکہ انگلینڈ کے خلاف پانچ ون ڈے میچوں اور ورلڈ کپ میں کھلاڑی ترو تازہ ہوکر شرکت کرسکیں۔

ذمہ دار ذرائع کے مطابق سرفراز احمد کو کم از کم دو ون ڈے انٹر نیشنل میچز میں آرام دیا جاسکتا ہے، آرام دینے کی تجویز قابل عمل ہوگئی تو قیادت کی ذمہ داری نوجوان شاداب خان کو دی جاسکتی ہے اور وکٹ کیپنگ محمد رضوان کریں گے۔

حیران کن طور پر ہونے والی پیش رفت کے طور پر شاداب خان کی موجودگی میں لیگ اسپنر یاسر شاہ کو بھی دو میچوں میں موقع دیا جائے گاتاکہ ورلڈ کپ سے پہلے یاسر شاہ کو بھی ون ڈے میچوں میں چیک کیا جاسکے۔

شاداب خان نے پاکستان Pakistan سپر لیگ میں محمد سمیع کے ان فٹ ہونے کے بعد کپتانی کے فرائض سر انجام دیئے ہیں اور انہیں ذہین کرکٹر مانا جاتا ہے۔

سلیکٹرز چاہتے ہیں کہ شاداب خان کو کپتانی دے کر مستقبل کیلئے ان کی قائدانہ صلاحیتوں کو پرکھا کیا جائے۔

حددرجہ ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف سلیکٹر انضمام الحق اور سلیکٹر وجاہت اللہ واسطی، مکی آرتھر اور سرفراز احمد سے ملاقات کریں گے تاکہ جن کھلاڑیوں کو آرام دینا ہے ان کے بارے میں فیصلہ کیا جاسکے۔

ذرائع نے بتایا کہ پاکستانی ٹیم انتظامیہ چھ سے 7 لڑکوں کو آزمانا چاہتی ہے جب کہ کچھ نئے لڑکوں کو بھی آزمایا جائے گا جن میں عمر اکمل، عابد علی، وہاب ریاض کو بھی موقع دیا جاسکتا ہے تاہم لاہور قلندرز کے فاسٹ بولر حارث رؤف کو فی الحال کھلانے کی کوئی تجویز نہیں ہے۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ستمبر میں ایشیا کپ سے پاکستانی ٹیم مسلسل کرکٹ کھیل رہی ہے، ایشیا کپ کے بعد آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کی سیریز پھر جنوبی افریقا کا دورہ اور اب پی ایس ایل نے لڑکوں کو تھکا دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سرفراز احمد بھی تینوں فارمیٹ میں کھیل رہے ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ کچھ لڑکوں کو آرام دیا جائے تاہم حتمی فیصلہ سرفراز احمد اور مکی آرتھر سے مشاورت کے بعد کیا جائے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ سرفراز احمد کو ورلڈ کپ کا کپتان بنانے کیلئے میں نے جنوبی افریقا سے آکر بورڈ سے بات کی تھی کیوں کہ میڈیا میں ہونے والی قیاس آرائیوں سے ابہام پیدا ہورہا تھا۔

ہیڈکوچ مکی آرتھر نے دبئی میں پریس کانفرنس میں کہا کہ پاکستانی کرکٹرز چار ماہ سے مسلسل کھیل کر تھکاوٹ کا شکار ہیں، بابر اعظم، شاداب خان، فہیم اشرف اور حسن علی کا ورلڈکپ تک فٹ رہنا ضروری ہے۔

ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے کہا کہ تینوں فارمیٹ کھیلنے والے کھلاڑیوں کو آسٹریلیا کی سیریز میں باری باری آرام دیا جائے گا اور انضمام الحق سے بات کرکے آسٹریلیا کے خلاف بینچ اسٹرینتھ کو آزمائیں گے۔

 120